ڈیرہ اسماعیل خان میں شیعہ ٹارگٹ کلنگ کا ایک اور واقعہ، دن دیہاڑے بھرے بازار میں امام بارگاہ کا متولی قتلامریکہ نے بیت المقدس کے حوالے سے متنازع اقدام اُٹھا کر اپنے پائوں پر کلہاڑی ماری ہے، سینیٹر حافظ حمداللہامریکی صدر نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کر لیاڈونلڈ ٹرمپ کا امریکی سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنیکا اعلانیمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح قتل / مکمل کہانی جلد ہی صرف اسلام ٹائمز پر ۔ ۔ ۔اسرائیل کا دمشق کے قریب ایرانی فوجی اڈے پر حملہ"محبین اہلبیت (ع) اور تکفیریت" بین الاقوامی کانفرنس کے شرکاء کی رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقاتہم نے اپنی حکمت اور دانائی سے تکفیریت کو گندگی کے ڈھیر پر پہنچا دیا، ہم آج 28 جماعتوں کی سربراہی کر رہے ہیں، علامہ ساجد نقویبریکنگ نیوز / سعودی ولی عہد پر قاتلانہ حملہ / مکمل خبر اسلام ٹائمز پر ملاحظہ کریںلاپتہ افراد کے حق میں آواز اُٹھانا جُرم بن گیا، ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ناصر شیرازی کو اغواء کر لیا گیا
 
 
 

امام معصوم کے فضائل و کمالات

شیعت کے لبادہ میں برطانوی ایجنٹ یاسر الحبیب کے خطرناک کارنامے

شیر خدا کی شیر دل بیٹی حضرت زینبؑ

غلو اور غالیان ائمہ معصومین علیہم السلام کی نظر میں

معصومہ اہل بیتؑ

غلو، غالی اور مقصر

مقام مصطفٰی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

علم اخلاق اسلامی

اہداف بعثت پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

حضرت محمد رسول اللہﷺکی ذاتِ گرامی

یہ وعدہ خدا ہے، نام حسین (ع) تا ابد زندہ رہیگا

عقیدہ ختم نبوت

اسوہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ہمارا معاشرہ

سامراء میں آئمہ اہلبیت کی مشکلات اور منجی بشریت

علوم و مراکز دینی کے احیاء میں امام رضا (ع) کا کردار

بعثت پیامبر (ص) کے اہداف و مقاصد

سفر گریہ

سفرِ عشق جاری ہے!

نجف سے کربلا۔۔۔ میں نے اسے کہا

زیارت امام حسین(ع)۔۔۔۔ گر تو برا نہ مانے

ایام عزا اور نجات دہندہ بشریت

امام زین العابدین کی حیات طیبہ کا اجمالی تذکرہ

امام صادق (ع) کا مقام امام ابو حنیفہ کی زبانی

استقبال ماہ رمضان المبارک

کن فیکن

حکومت، اسکے تقاضے اور موجودہ حکمران

زیارات معصومینؑ کی مخالفت، ذہنی فتور ہے

دینی مدارس، غلط فہمیاں اور منفی پروپیگنڈہ

شناخت مجهولات کا منطقی راستہ

 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Tuesday 13 February 2018 - 15:39
Share/Save/Bookmark
کراچی، اسٹیل ملز کی قیمتی زمین پر قبضہ مافیا کے سرگرم ہونے کا انکشاف
کراچی، اسٹیل ملز کی قیمتی زمین پر قبضہ مافیا کے سرگرم ہونے کا انکشاف
 
 
حکومت کے پاس پاکستان اسٹیل کی بحالی کا منصوبہ نہیں ہے، مل کا نہ بورڈ مکمل ہے اور کوئی اہلیت کا حامل سربراہ ہے جبکہ نظریں مل کی زمین پر جمی ہوئی ہیں۔ ساڑھے 1500 ایکڑ کی زمین جس پر سی پیک کا اسپیشل اکنامک زون بننا ہے، لیکن زمین کو کس قیمت پر فروخت کرنا ہے حکومت اس کا تعین بھی نہیں کرسکی ہے۔
 
اسلام ٹائمز۔ حکومت گذشتہ 4 سالوں میں پاکستان اسٹیل ملز کے ملازمین کی تنخواہوں کی ادائیگی کے لئے ساڑھے 18 ارب روپے قرض دے چکی ہے۔ پاکستان اسٹیل ملز کو گیس سپلائی 31 مہینوں پہلے 45 ارب روپے کے واجبات ادا نہ کرنے پر بند کردی گئی تھی جس کے بعد سے مل کی پیداوار بند ہے، تاہم مزدوروں کی تنخواہیں ادا کرنے کے لئے حکومت 47 مہینوں سے قرض فراہم کررہی ہے جو اب ساڑھے 18 ارب روپے ہوچکا ہے۔ حکومت کی جانب سے اتنی رقم ادا کرنے کے باوجود اسٹیل ملز ملازمین کی گذشتہ 4 مہینوں کی تنخواہیں واجب الادا ہیں جو تقریباً 1 ارب 60 کروڑ روپے بنتی ہے جبکہ ریٹائرڈ ملازمین کے واجبات بھی ادا نہیں کیے جارہے ہیں۔ حکومت کے پاس پاکستان اسٹیل کی بحالی کا منصوبہ نہیں ہے، مل کا نہ بورڈ مکمل ہے اور کوئی اہلیت کا حامل سربراہ ہے جبکہ نظریں مل کی زمین پر جمی ہوئی ہیں۔ ساڑھے 1500 ایکڑ کی زمین جس پر سی پیک کا اسپیشل اکنامک زون بننا ہے، لیکن زمین کو کس قیمت پر فروخت کرنا ہے حکومت اس کا تعین بھی نہیں کرسکی ہے۔ مل انتظامیہ فعال نہیں ہے اس لئے زمینوں پر قبضے ہورہے ہیں، غیر قانونی تعیمرات شروع ہوچکی ہیں بلکہ غیرقانونی تعمیرات کے لئے سریہ اور اینٹیں فروخت کرنے کا کاروبار بھی مل کی زمین سے ہی کیا جارہا ہے۔ کہا جارہا ہے کہ یہ سب کچھ مل کی زمین اونے پونے بیچنے کے لئے ہورہا ہے جبکہ ایک قبضہ گروپ کے خلاف ایف آئی آر بھی درج کرائی گئی ہے اور 8 ملزمان بھی نامزد ہوئے ہیں لیکن دیکھنا یہ ہے کہ سندھ حکومت اسٹیل ملز کی قیمتی زمین پر قبضہ کرنے والوں کے خلاف کیا اقدامات اٹھاتی ہے۔
 
خبر کا کوڈ: 704567