ڈیرہ اسماعیل خان میں شیعہ ٹارگٹ کلنگ کا ایک اور واقعہ، دن دیہاڑے بھرے بازار میں امام بارگاہ کا متولی قتلامریکہ نے بیت المقدس کے حوالے سے متنازع اقدام اُٹھا کر اپنے پائوں پر کلہاڑی ماری ہے، سینیٹر حافظ حمداللہامریکی صدر نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کر لیاڈونلڈ ٹرمپ کا امریکی سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنیکا اعلانیمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح قتل / مکمل کہانی جلد ہی صرف اسلام ٹائمز پر ۔ ۔ ۔اسرائیل کا دمشق کے قریب ایرانی فوجی اڈے پر حملہ"محبین اہلبیت (ع) اور تکفیریت" بین الاقوامی کانفرنس کے شرکاء کی رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقاتہم نے اپنی حکمت اور دانائی سے تکفیریت کو گندگی کے ڈھیر پر پہنچا دیا، ہم آج 28 جماعتوں کی سربراہی کر رہے ہیں، علامہ ساجد نقویبریکنگ نیوز / سعودی ولی عہد پر قاتلانہ حملہ / مکمل خبر اسلام ٹائمز پر ملاحظہ کریںلاپتہ افراد کے حق میں آواز اُٹھانا جُرم بن گیا، ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ناصر شیرازی کو اغواء کر لیا گیا
 
 
 

حضرت فاطمہ زہراء (س) اور حضرت مریم (س) کے فضائل کا تقابلی جائزہ

امام معصوم کے فضائل و کمالات

شیعت کے لبادہ میں برطانوی ایجنٹ یاسر الحبیب کے خطرناک کارنامے

شیر خدا کی شیر دل بیٹی حضرت زینبؑ

غلو اور غالیان ائمہ معصومین علیہم السلام کی نظر میں

معصومہ اہل بیتؑ

غلو، غالی اور مقصر

مقام مصطفٰی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

علم اخلاق اسلامی

اہداف بعثت پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

حضرت محمد رسول اللہﷺکی ذاتِ گرامی

یہ وعدہ خدا ہے، نام حسین (ع) تا ابد زندہ رہیگا

عقیدہ ختم نبوت

اسوہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ہمارا معاشرہ

سامراء میں آئمہ اہلبیت کی مشکلات اور منجی بشریت

علوم و مراکز دینی کے احیاء میں امام رضا (ع) کا کردار

بعثت پیامبر (ص) کے اہداف و مقاصد

سفر گریہ

سفرِ عشق جاری ہے!

نجف سے کربلا۔۔۔ میں نے اسے کہا

زیارت امام حسین(ع)۔۔۔۔ گر تو برا نہ مانے

ایام عزا اور نجات دہندہ بشریت

امام زین العابدین کی حیات طیبہ کا اجمالی تذکرہ

امام صادق (ع) کا مقام امام ابو حنیفہ کی زبانی

استقبال ماہ رمضان المبارک

کن فیکن

حکومت، اسکے تقاضے اور موجودہ حکمران

زیارات معصومینؑ کی مخالفت، ذہنی فتور ہے

دینی مدارس، غلط فہمیاں اور منفی پروپیگنڈہ

 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Tuesday 6 February 2018 - 20:51
Share/Save/Bookmark
چیف جسٹس اور آرمی چیف انجینئر ممتاز رضوی کی فوری بازیابی و سلامتی کو یقینی بنائیں، اہلیہ کی پریس کانفرنس
چیف جسٹس اور آرمی چیف انجینئر ممتاز رضوی کی فوری بازیابی و سلامتی کو یقینی بنائیں، اہلیہ کی پریس کانفرنس
 
 
کراچی پریس کلب میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے اہلیہ انجینئر سید ممتاز حسین رضوی‎ نے کہا کہ میرے شوہر پاکستان کے ایک محب وطن و اعلٰی تعلیم یافتہ، ذمہ دار شہری ہیں، انکا اغواء و گمشدگی انکی عمر رسیدہ والدہ اور ہم اہلخانہ کیلئے انتہائی کرب و اذیت کا سبب ہے، خدارا انکو بازیاب کروا کر ہم اہلخانہ کو اس مشکل سے نجات دلائی جائے۔
 
اسلام ٹائمز۔ 23 جنوری سے تاحال لاپتہ شیعہ انجینئر سید ممتاز حسین رضوی کی اہلیہ نے مطالبہ کیا ہے کہ چیف جسٹس پاکستان، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ممتاز حسین رضوی کی فوری بازیابی و سلامتی کو یقینی بنائیں۔ تفصیلات کے مطابق کراچی پریس کلب میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے اہلیہ سید ممتاز رضوی‎ نے کہا کہ آج یہاں اپنے 56 سالہ شوہر سید ممتاز رضوی کی گمشدگی کے حوالے سے فریاد لیکر آئی ہوں، تاکہ صحافی برادری کے توسط سے میرے شوہر کو بازیاب کرایا جا سکے، جنکا آج 15 روز گزرنے کے باوجود بھی پتہ نہیں لگ سکا، میرے شوہر ممتاز رضوی ایک فلاحی، سماجی، علمی و محب وطن شخصیت، غریبوں اور یتیموں کے مددگار، اعلٰی تعلیم یافتہ انجینئر ہیں، جو 23 جنوری سے لاپتہ کر دیئے گئے ہیں، ہم اہلخانہ و انکے دوست احباب اپنی تمام تر کوششوں کے باوجود ان کی کوئی بھی خبر نہیں پا سکے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ممتاز رضوی الیکٹرانک انجینئر ہیں، جبکہ وہ کراچی یونیورسٹی سے بطور ریگولر طالبعلم انٹرنیشنل ریلیشنز میں ماسٹرز کی ڈگری بھی حاصل کرچکے ہیں، یونیورسٹی کے مشہور اساتذہ انکو ایک قابل اور مہذب طالبعلم کے طور پر جانتے ہیں، وہ آج کل کراچی کی معروف نجی تعلیمی ادارے SZABIST سے بین الاقوامی تعلقات میں پی ایچ ڈی کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ممتاز حسین رضوی اپنے حلقہ احباب میں علم دوست شخصیت کے طور پر جانے جاتے رہے ہیں، انکا شمار اچھے طالب علموں میں ہونے کے ساتھ ساتھ ماہر و شفیق اساتذہ میں ہوتا ہے، جو مسلسل طلب علم میں مصروف رہے ہیں اور اس کی مثال ان کا SZABIST یونیورسٹی سے PHD کرنا ہے۔

اہلیہ ممتاز رضوی نے کہا کہ میرے لاپتہ شوہر کی ہمیشہ کوشش رہی کہ معاشرے میں علم پرور مثبت سوچ کو پروان چڑھایا جائے، اسی لئے وہ کافی عرصے سے باقاعدہ ماہانہ رسالہ ''علم و حرفت'' شائع کرتے چلے آرہے ہیں، ممتاز رضوی کا کمپیوٹر سے متعلق اپنا ذاتی کاروبار ہے، گذشتہ 20 سال سے وہ اسی کاروبار سے وابستہ ہیں، انجینئر ممتاز رضوی ہمیشہ ملی، فلاحی و سماجی کاموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے رہے ہیں، یہی وجہ ہے کہ شہداء کے خاندانوں کے ساتھ ایک خصوصی تعلق ہے، اسی مدد کے جذبے کے تحت ایتمام فاؤنڈیشن اور شہداء کے خانوادوں کی سرپرستی میں فعال کردار ادا کیا۔ اہلیہ ممتاز حسین نے کہا کہ چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیراعلٰی سندھ سید مراد علی شاہ، گورنر سندھ محمد زبیر، ڈی جی رینجرز، آئی جی سندھ، سول سوسائٹی، اعلٰی عدلیہ اور پاکستان کی مقتدر قوتوں سے اپیل کرتی ہوں کہ میرے لاپتہ شوہر سید ممتاز حسین رضوی کی فوری بازیابی و سلامتی کو یقینی بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ میرے شوہر پاکستان کے ایک محب وطن و اعلٰی تعلیم یافتہ، ذمہ دار شہری ہیں، انکا اغواء و گمشدگی انکی عمر رسیدہ والدہ اور ہم اہلخانہ کیلئے انتہائی کرب و اذیت کا سبب ہے، خدارا انکو بازیاب کرا کے ہم اہلخانہ کو اس مشکل سے نجات دلائی جائے۔ پریس کانفرنس کے آخر میں اہلیہ ممتاز حسین نے صحافی برادری کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے زحمت کی اور میری آواز کو حکام بالا تک پہچانے میں مددگار ثابت ہوئے۔ اس موقع پر سول سوسائٹی کے معروف رہنماء جبران ناصر بھی موجود تھے۔
 
خبر کا کوڈ: 702781
 
 
3


الطاف حسین
Iran, Islamic Republic of
1396-11-18 10:12:35
ھماری دعائیں آپکے ساتھ ھیں اور ظالموں کے لئے عذاب ھے۔
ایک مجرب عمل شروع کیا جائے۔ سورہ توحید کی ایک ھزار مرتبہ تلاوت کی جائے۔ انشاء اللہ تعالی آزاد ھو جائے گا۔ (601567)
 
عبداللہ
United States
1396-11-18 15:11:09
سلام۔ الطاف صاحب نے جس مجرب عمل کی نشاندہی کی ہے، اس پر خلوص نیت کے ساتھ عمل کرنا چاہیئے۔ پروردگار عالم سے دعا ہے کہ ممتاز صاحب سلامتی کے ساتھ جلد بازیاب ہوکر اپنے اہلخانہ کے درمیان ہوں۔ آمین
والسلام (601570)
 
Iran, Islamic Republic of
1396-11-19 00:04:06
ہماری دعائیں آپکے ساتھ ہیں اور ظالموں کے لئے عذاب ہے۔ (601576)