سعودی لڑاکا طیاروں کی کاروائی ، یمن میں ایک ہی خاندان کے ۹ افراد جاں بحقکرم ایجنسی میں ڈرون حملہ، 3 دہشت گرد ہلاکبرما کے بے گھر مسلمانوں کیلئے ایران کا امدادی کاروان روانہ / آج پہلی امدادی کھیپ بنگلہ دیش روانہ کر دی گئیایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے روس کا دورہ کیا / سوچی میں ولادیمیر پوٹین سے ملاقاتبرما کے مسئلہ کا حل مسلمان ممالک کی عملی مداخلت سے حل ہو گا، رہبر معظم انقلاب اسلامیرہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی امام خامنہ ای نے اب سے چند گھنٹے پہلے اپنے درس فقہ میں برما کے مسلمانوں پر ہونے والے ظلم کی شدید الفاظ میں شامی فوج اور مقاومتی فورسز کی پیشقدمی، دیرالزور کا فوجی ہوائی اڈہ آزادوزیر خارجہ پاکستان کی جناب آقای روحانی صدر جمہوری اسلامی ایران سے ملاقات / دو جانبہ مسائل پر گفتگوخواجہ آصف کی ایران آمد / وزیر خارجہ محمد جواد ظریف سے ملاقاتشام صوبہ دیرالزور سے داعش کا مکمل خاتمہ / متحدہ فورسز کا جبل الثردہ پر کنٹرول
 
 
 
 
 
 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Thursday 17 August 2017 - 10:54
Share/Save/Bookmark
کانگریس نے کشمیر میں قیامِ امن کیلئے 10 برس کام کیا ہے، راہل گاندھی
کانگریس نے کشمیر میں قیامِ امن کیلئے 10 برس کام کیا ہے، راہل گاندھی
 
 
کانگریس کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے جموں و کشمیر میں نفرت اور غصہ کا ماحول پیدا کر دیا ہے اور جموں و کشمیر میں اس نفرت اور تشدد سے پاکستان کو فائدہ ہو رہا ہے۔
 
اسلام ٹائمز۔ راہل گاندھی نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی جموں و کشمیر پالیسی پر تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ جموں و کشمیر میں مداخلت کرنے کیلئے پاکستان کو جگہ فراہم کی گئی ہے۔ بھارت کی یوم آزادی پر نریندر مودی کے کشمیر کے متعلق خطاب، جس میں انہوں نے کشمیری عوام سے محاطب ہو کر کہا تھا کہ جموں و کشمیر کا مسئلہ گولی اور گالی سے نہیں بلکہ وہاں کے لوگوں کو گلے لگانے سے حل ہوگا، کے ایک دن بعد کانگریس کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے جموں و کشمیر میں نفرت اور غصہ کا ماحول پیدا کر دیا ہے اور جموں و کشمیر میں اس نفرت اور تشدد سے پاکستان کو فائدہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے مسئلے پر ملک کے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کے ساتھ پی چدمبرم اور جے رام رمیش نے کام کیا اور بنا کسی شور شرابے اور تماشے کے انہوں نے کشمیر میں امن قائم کرنے کیلئے اپنی کوششیں دس برس تک جاری رکھیں لیکن مودی حکومت نے اس کو ایک ماہ میں تباہ کر دیا۔

راہل گاندھی نے کہا کہ 2004ء میں کانگریس نے جب اٹل بہاری واجپائی سے حکومت حاصل کی، تب کشمیر جل رہا تھا اور منموہن حکومت نے کشمیر میں امن قائم کر کے سب سے بڑی کامیابی حاصل کی تھی اور کشمیر میں امن لانے کیلئے کانگریس نے دس سال تک محنت کی۔ راہل گاندھی نے کہا کہ ہم نے پنچایتی انتخاب کرائے، روزگار پر کام کیا، تعمیر و ترقی کرائی کیونکہ ہم کشمیر میں امن اور ہم آہنگی چاہتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہم جموں و کشمیر کے لوگوں کو گلے لگانا چاہتے تھے اور اُن کے گلے لگنا چاہتے تھے کیونکہ ہم وہاں امن چاہتے تھے اور جب جموں و کشمیر میں امن ہوگا تو پاکستان کچھ بھی نہیں کر سکتا ہے اور نہ ہی وہاں پاکستان کیلئے کوئی بھی جگہ رہے گی۔
 
خبر کا کوڈ: 661936