امریکہ نے بیت المقدس کے حوالے سے متنازع اقدام اُٹھا کر اپنے پائوں پر کلہاڑی ماری ہے، سینیٹر حافظ حمداللہامریکی صدر نے مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کر لیاڈونلڈ ٹرمپ کا امریکی سفارتخانہ مقبوضہ بیت المقدس منتقل کرنیکا اعلانیمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح قتل / مکمل کہانی جلد ہی صرف اسلام ٹائمز پر ۔ ۔ ۔اسرائیل کا دمشق کے قریب ایرانی فوجی اڈے پر حملہ"محبین اہلبیت (ع) اور تکفیریت" بین الاقوامی کانفرنس کے شرکاء کی رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی سید علی خامنہ ای سے ملاقاتہم نے اپنی حکمت اور دانائی سے تکفیریت کو گندگی کے ڈھیر پر پہنچا دیا، ہم آج 28 جماعتوں کی سربراہی کر رہے ہیں، علامہ ساجد نقویبریکنگ نیوز / سعودی ولی عہد پر قاتلانہ حملہ / مکمل خبر اسلام ٹائمز پر ملاحظہ کریںلاپتہ افراد کے حق میں آواز اُٹھانا جُرم بن گیا، ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل ناصر شیرازی کو اغواء کر لیا گیاانتظامیہ زائرین کو بنیادی سہولیات بھی فراہم کرنے سے قاصر ہے، اس راستے کو کسی صورت نہیں چھوڑینگے، علامہ ساجد نقوی
 
 
 

معصومہ اہل بیتؑ

غلو، غالی اور مقصر

مقام مصطفٰی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

علم اخلاق اسلامی

اہداف بعثت پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

حضرت محمد رسول اللہﷺکی ذاتِ گرامی

یہ وعدہ خدا ہے، نام حسین (ع) تا ابد زندہ رہیگا

عقیدہ ختم نبوت

اسوہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ہمارا معاشرہ

سامراء میں آئمہ اہلبیت کی مشکلات اور منجی بشریت

علوم و مراکز دینی کے احیاء میں امام رضا (ع) کا کردار

بعثت پیامبر (ص) کے اہداف و مقاصد

سفر گریہ

سفرِ عشق جاری ہے!

نجف سے کربلا۔۔۔ میں نے اسے کہا

زیارت امام حسین(ع)۔۔۔۔ گر تو برا نہ مانے

ایام عزا اور نجات دہندہ بشریت

امام زین العابدین کی حیات طیبہ کا اجمالی تذکرہ

امام صادق (ع) کا مقام امام ابو حنیفہ کی زبانی

استقبال ماہ رمضان المبارک

کن فیکن

حکومت، اسکے تقاضے اور موجودہ حکمران

زیارات معصومینؑ کی مخالفت، ذہنی فتور ہے

دینی مدارس، غلط فہمیاں اور منفی پروپیگنڈہ

شناخت مجهولات کا منطقی راستہ

انسان کی شخصیت میں دوست کا کردار

اقبال اور تصورِ امامت (1)

روزے کا فلسفہ، چند معروضات

قیام امام حسینؑ کی اہمیت غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Thursday 17 August 2017 - 10:54
Share/Save/Bookmark
کانگریس نے کشمیر میں قیامِ امن کیلئے 10 برس کام کیا ہے، راہل گاندھی
کانگریس نے کشمیر میں قیامِ امن کیلئے 10 برس کام کیا ہے، راہل گاندھی
 
 
کانگریس کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے جموں و کشمیر میں نفرت اور غصہ کا ماحول پیدا کر دیا ہے اور جموں و کشمیر میں اس نفرت اور تشدد سے پاکستان کو فائدہ ہو رہا ہے۔
 
اسلام ٹائمز۔ راہل گاندھی نے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کی جموں و کشمیر پالیسی پر تنقید کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ جموں و کشمیر میں مداخلت کرنے کیلئے پاکستان کو جگہ فراہم کی گئی ہے۔ بھارت کی یوم آزادی پر نریندر مودی کے کشمیر کے متعلق خطاب، جس میں انہوں نے کشمیری عوام سے محاطب ہو کر کہا تھا کہ جموں و کشمیر کا مسئلہ گولی اور گالی سے نہیں بلکہ وہاں کے لوگوں کو گلے لگانے سے حل ہوگا، کے ایک دن بعد کانگریس کی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا کہ مودی حکومت نے جموں و کشمیر میں نفرت اور غصہ کا ماحول پیدا کر دیا ہے اور جموں و کشمیر میں اس نفرت اور تشدد سے پاکستان کو فائدہ ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کے مسئلے پر ملک کے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کے ساتھ پی چدمبرم اور جے رام رمیش نے کام کیا اور بنا کسی شور شرابے اور تماشے کے انہوں نے کشمیر میں امن قائم کرنے کیلئے اپنی کوششیں دس برس تک جاری رکھیں لیکن مودی حکومت نے اس کو ایک ماہ میں تباہ کر دیا۔

راہل گاندھی نے کہا کہ 2004ء میں کانگریس نے جب اٹل بہاری واجپائی سے حکومت حاصل کی، تب کشمیر جل رہا تھا اور منموہن حکومت نے کشمیر میں امن قائم کر کے سب سے بڑی کامیابی حاصل کی تھی اور کشمیر میں امن لانے کیلئے کانگریس نے دس سال تک محنت کی۔ راہل گاندھی نے کہا کہ ہم نے پنچایتی انتخاب کرائے، روزگار پر کام کیا، تعمیر و ترقی کرائی کیونکہ ہم کشمیر میں امن اور ہم آہنگی چاہتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ ہم جموں و کشمیر کے لوگوں کو گلے لگانا چاہتے تھے اور اُن کے گلے لگنا چاہتے تھے کیونکہ ہم وہاں امن چاہتے تھے اور جب جموں و کشمیر میں امن ہوگا تو پاکستان کچھ بھی نہیں کر سکتا ہے اور نہ ہی وہاں پاکستان کیلئے کوئی بھی جگہ رہے گی۔
 
خبر کا کوڈ: 661936