سعودی لڑاکا طیاروں کی کاروائی ، یمن میں ایک ہی خاندان کے ۹ افراد جاں بحقکرم ایجنسی میں ڈرون حملہ، 3 دہشت گرد ہلاکبرما کے بے گھر مسلمانوں کیلئے ایران کا امدادی کاروان روانہ / آج پہلی امدادی کھیپ بنگلہ دیش روانہ کر دی گئیایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے روس کا دورہ کیا / سوچی میں ولادیمیر پوٹین سے ملاقاتبرما کے مسئلہ کا حل مسلمان ممالک کی عملی مداخلت سے حل ہو گا، رہبر معظم انقلاب اسلامیرہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ العظمی امام خامنہ ای نے اب سے چند گھنٹے پہلے اپنے درس فقہ میں برما کے مسلمانوں پر ہونے والے ظلم کی شدید الفاظ میں شامی فوج اور مقاومتی فورسز کی پیشقدمی، دیرالزور کا فوجی ہوائی اڈہ آزادوزیر خارجہ پاکستان کی جناب آقای روحانی صدر جمہوری اسلامی ایران سے ملاقات / دو جانبہ مسائل پر گفتگوخواجہ آصف کی ایران آمد / وزیر خارجہ محمد جواد ظریف سے ملاقاتشام صوبہ دیرالزور سے داعش کا مکمل خاتمہ / متحدہ فورسز کا جبل الثردہ پر کنٹرول
 
 
 
 
 
 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Saturday 1 July 2017 - 15:07
Share/Save/Bookmark
نریندر مودی آج ایئر انڈیا بیچ رہے ہیں کل کشمیر بھی فروخت کردیں گے، شیو سینا
نریندر مودی آج ایئر انڈیا بیچ رہے ہیں کل کشمیر بھی فروخت کردیں گے، شیو سینا
 
 
راہل گاندھی نے ٹویٹ کر کے کہا ’’بہت کم، بہت تاخیر سے، جب تک بات پر عمل نہیں ہو الفاظ کے کوئی معنی نہیں ہوتے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’وزیراعظم نے اس مسئلے پر بہت کم بولا اور بہت تاخیر سے بیان دیا‘‘۔
 
اسلام ٹائمز۔ کانگریس نے بھارت میں گاؤ رکشا سے متعلق نریندر مودی کے بیان کو چھلاوا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ جب تک بات پر عمل نہ ہو، الفاظ کا کوئی مطلب نہیں۔ اس دوران شیو سینا نے نریندر مودی حکومت پر تیکھا حملہ کرتے ہوئے سوال کیا کہ آج ایئر انڈیا بیچ رہے ہیں، تو کل کیا کشمیر بھی فروخت کردیں گے۔ تفصیلات کے  مطابق راہل گاندھی نے ٹویٹ کر کے کہا ’’بہت کم، بہت تاخیر سے، جب تک بات پر عمل نہیں ہو الفاظ کے کوئی معنی نہیں ہوتے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’وزیراعظم نے اس مسئلے پر بہت کم بولا اور بہت تاخیر سے بیان دیا‘‘۔ انہوں نے ساتھ ہی کہا کہ الفاظ نہیں ان پر عمل کرنے کی اہمیت ہے۔ راہل گاندھی نے مودی کے بیان کو چھلاوا قرار دیتے ہوئے کہا کہ جب تک عمل نہ ہو، الفاظ کے کوئی معنی نہیں۔

اس دوران بی جے پی کی اتحادی پارٹی شیو سینا نے اپنے ترجمان اخبار سامنا میں ایئر انڈیا میں سرمایہ کشی کو لے کر بھاجپا پر تیکھا نشانہ سادھا ہے۔ اخبار سامنا میں لکھا ہے کہ آج اخراجات کی وجہ سے ایئر انڈیا کو فروخت کیا جا رہا ہے تو کیا کل کشمیر کو بھی سیکورٹی میں ہو رہے اخراجات کی وجہ سے فروخت کردیا جائے گا۔ سامنا میں لکھا ہے کہ آج ایئر انڈیا کے قرض کا بوجھ نہیں جھیلا جا رہا ہے، اس لئے اسے فروخت کیا جا رہا ہے، کل اگر کشمیر کی سیکورٹی میں ہو رہے اخراجات برداشت نہیں ہوئے، تو کیا کشمیر کی بھی نیلامی ہوگی۔
 
خبر کا کوڈ: 649774