پاراچنار بڑی تباہی سے بچ گیا، افغانستان سے آنے والی بارود سے بھری گاڑی پر بورکی بارڈر کے قریب فورسز کی فائرنگ، گاڑی دھماکے سے تباہکرم ایجنسی کے قریب افغانستان کے علاقے نری کنڈوں پر امریکی جیٹ طیاروں کی بمباری 16 افغان طالبان ہلاک، کئی شدید زخمی، افغان ذرائعپاراچنار بم دھماکے کا ایک اور زخمی کفایت حسین شہید ہوگیا، یوں بم دھماکے کے شہداء کی تعداد 26 ہوگئیپاراچنار، افغانستان کی سرحدی علاقے سے پاراچنار کے نواحی علاقوں پر یکے بعد دیگرے دو میزائل فائرپارا چنار پھر لہو لہو، امام بارگاہ کے قریب زوردار دھماکہ، خواتین و بچوں سمیت 22 افراد شہید، 55 سے زائد زخمیپاراچنار، دھماکہ کیخلاف احتجاج کرنیوالے مظاہرین پر فورسز کی فائرنگ، 2 افراد شہید، 9 زخمیپاراچنار، پاک افغان سرحد پر متھہ سنگر کے قریب ڈرون حملہ، متعدد ہلاکتوں کی اطلاعہر دور کے حکمرانوں نے سرائیکی وسیب کی محروم عوام کا استحصال کیا، کالعدم جماعتوں کیخلاف کارروائی نہ ہونیکے برابر ہے، علامہ ناصر عباسلودھراں کے قریب 2 رکشے ٹرین کی زد میں آگئے، 7 بچوں سمیت 8 افراد جاں بحقکراچی، فرید اور زکریا ایکسپریس میں تصادم، 17 افراد جاں بحق، ریسکیو کا کام جاری
 
 
 
 
 
 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Wednesday 11 January 2017 - 20:43
Share/Save/Bookmark
ایم کیو ایم لندن کا مہاجر لبریشن آرمی کے نام سے کی جانے والی اشتعال انگیز وال چاکنگ سے اظہار لاتعلقی
ایم کیو ایم لندن کا مہاجر لبریشن آرمی کے نام سے کی جانے والی اشتعال انگیز وال چاکنگ سے اظہار لاتعلقی
 
 
ایک بیان میں ایم کیو ایم لندن کے ترجمان نے کہا کہ ہمارے کارکنان تو استحکام پاکستان ریلی کے حوالے سے رابطوں اور تیاریوں میں مصروف ہیں، یہ چاکنگ بعض عناصر کی شرارت اور ایم کیو ایم کو بدنام کرنے کی سازش معلوم ہوتی ہے۔
 
اسلام ٹائمز۔ متحدہ قومی موومنٹ لندن نے مہاجر لبریشن آرمی کے نام سے کی جانے والی اشتعال انگیز وال چاکنگ سے اظہار لاتعلقی کردیا۔ ترجمان ایم کیو ایم لندن کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کراچی میں بعض مقامات پر مہاجر لبریشن آرمی کے نام سے کی جانے والی اشتعال انگیز چاکنگ سے ایم کیو ایم لندن کا کوئی تعلق نہیں ہے۔ انہوں نے دوٹوک الفاظ میں کہا کہ ایم کیو ایم لندن کے کارکنان تو استحکام پاکستان ریلی کے حوالے سے رابطوں اور تیاریوں میں مصروف ہیں، یہ چاکنگ بعض عناصر کی شرارت اور ایم کیو ایم کو بدنام کرنے کی سازش معلوم ہوتی ہے۔ ترجمان نے مطالبہ کیا کہ اشتعال پھیلانے والے ایسے عناصر کے خلاف کارروائی کی جائے اور انہیں بے نقاب کیا جائے۔
 
خبر کا کوڈ: 599237