افغانستان، پاک افغان سرحد کے قریب ڈرون حملہ، 12 افراد ہلاککرم ایجنسی، پاک افغان سرحدی علاقہ غوزگڑی میں امریکی ڈرون حملہ، اب تک کوئی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی، ابتدائی رپورٹ"محبین اہلبیت (ع) اور تکفیریت" بین الاقوامی کانفرنس کیلئے مقالات کی کالامریکی ڈرون حملہ /شام میں حزب اللہ کے ۸ کمانڈو شہیددمشق المیدان اسکوائر میں خودکش دھماکہ / ۱۰ افراد شہید ۲۰ مجروحکابل میں امام بارگاہ کے قریب خودکش دھماکہ، 6 افراد جاں بحق اور متعدد زخمیکابل میں مسجد شیعیان پر دہشت گردوں کا حملہ / ۶ شہید ۳۳ زخمیافغانستان کو داعش کا گڑھ بنانا پاکستان کیخلاف امریکی سازش کا حصہ ہے، جنرل(ر) اسلم بیگکرم ایجنسی، سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر یکے بعد دیگرے 2 بم دھماکے، 4 اہلکار زخمیشہید مدافع حرم محسن حججی کی تہران میں با شکوہ تشیع جنازہ / تفصیلی خبر جلد ہی اسلام ٹائمز پر
 
 
 

امام صادق (ع) کا مقام امام ابو حنیفہ کی زبانی

استقبال ماہ رمضان المبارک

کن فیکن

حکومت، اسکے تقاضے اور موجودہ حکمران

زیارات معصومینؑ کی مخالفت، ذہنی فتور ہے

دینی مدارس، غلط فہمیاں اور منفی پروپیگنڈہ

شناخت مجهولات کا منطقی راستہ

انسان کی شخصیت میں دوست کا کردار

اقبال اور تصورِ امامت (1)

روزے کا فلسفہ، چند معروضات

قیام امام حسینؑ کی اہمیت غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

امام حسین (ع) کے بارے میں آئمہ معصومین علیہم السلام کے ارشادات

تاریخ بشریت کا چمکتا ستارہ

فضیلت حضرت علیؑ غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

علی کی شیر دل بیٹی

حضرت فاطمۃالزہرا (س) بحیثیت آئیڈیل شخصیت

حضرت علی المرتضٰی۔ؑ ۔۔۔ شمعِ رسالت کا بےمثل پروانہ

زہراء (س) کیا کرے!

عظمت حضرت زہرا (س) غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

وہ جو اصلِ لفظ بہار ہے

انقلاب حسين بزبان حضرت امام حسين (ع)

محبت اہل بیت (ع)

مشہدالمقدس، مسافر خانہ حسینیہ شہید عارف الحسینی میں میرا قیام (آخری حصہ)

مکتب تشیع کے ترجمان؟

اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد

الشام۔۔الشام۔۔الشام

معجزہ گر سپہ سالار

شہادتِ امام حسین (ع) کے مقاصد اور انکا حصول

آئیں حسینؑ کا غم مل کر منائیں

 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Wednesday 11 January 2017 - 21:23
Share/Save/Bookmark
یہ وقت کشمیریوں کیساتھ کئے گئے وعدوں پر عمل کرنے کا ہے، حکیم محمد یاسین
یہ وقت کشمیریوں کیساتھ کئے گئے وعدوں پر عمل کرنے کا ہے، حکیم محمد یاسین
 
 
مقبوضہ کشمیر کے گورنر این این وہرا کے خطبے پر پیش کی گئی شکریہ کی تحریک پر بولتے ہوئے حکیم محمد یاسین نے کہا کہ تاریخی معاملات کو چھوڑئے بلکہ اپنا محاسبہ کیجئیے کہ لوگوں کے ساتھ جو وعدے کئے گئے ان کو کہاں تک پورا کیا گیا ہے۔
 
اسلام ٹائمز۔ جموں و کشمیر پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے سربراہ حکیم محمد یاسین نے کہا کہ یہ وقت ہلاکتوں پر اعداد و شمار گننے کا نہیں ہے، بلکہ وہ وعدے پورے کئے جائیں جو الیکشن اور اس کے بعد حکومت کے قیام پر کئے گئے تھے۔ مقبوضہ کشمیر کے گورنر این این وہرا کے خطبے پر پیش کی گئی شکریہ کی تحریک پر بولتے ہوئے حکیم محمد یاسین نے کہا کہ تاریخی معاملات کو چھوڑئے بلکہ اپنا محاسبہ کیجئے کہ لوگوں کے ساتھ جو وعدے کئے گئے ان کو کہاں تک پورا کیا گیا ہے۔ انہوں نے ریاست جموں و کشمیر کو درپیش مسائل خاص طور پر مسئلہ کشمیر کے حل کے حوالے سے گورنر کے خطبے میں وضاحت سے ذکر نہ کئے جانے پر کہا کہ خطبے میں مبہم الفاظ میں باتیں کی گئیں، جن کے بارے میں وضاحت کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ گورنر کا خطبہ مبہم ہے اور یہ پتہ نہیں چلتا کہ کس کی طرف اشارہ ہے اور وہ کس کو مخاطب کر رہے ہیں۔ حکیم یاسین نے کہا کہ یہ وقت لوگوں کے ساتھ کئے گئے وعدوں پر عمل کرنے کا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جب بھاجپا کے ساتھ اتحاد کرکے حکومت بنائی گئی، تو ہم مفتی سعید کے پاس گئے اور ان سے کہا کہ نیشنل کانفرنس اور کانگریس سے مل کر حکومت بنا لیتے لیکن انہوں نے کہا کہ ترقیاتی کام تو ہوتے رہیں گے لیکن ہمارا سب سے اہم مقصد مسئلہ کشمیر ہے، جس کا سیاسی حل نکالنا اشد ضروری ہے۔
 
خبر کا کوڈ: 599202