افغانستان، پاک افغان سرحد کے قریب ڈرون حملہ، 12 افراد ہلاککرم ایجنسی، پاک افغان سرحدی علاقہ غوزگڑی میں امریکی ڈرون حملہ، اب تک کوئی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی، ابتدائی رپورٹ"محبین اہلبیت (ع) اور تکفیریت" بین الاقوامی کانفرنس کیلئے مقالات کی کالامریکی ڈرون حملہ /شام میں حزب اللہ کے ۸ کمانڈو شہیددمشق المیدان اسکوائر میں خودکش دھماکہ / ۱۰ افراد شہید ۲۰ مجروحکابل میں امام بارگاہ کے قریب خودکش دھماکہ، 6 افراد جاں بحق اور متعدد زخمیکابل میں مسجد شیعیان پر دہشت گردوں کا حملہ / ۶ شہید ۳۳ زخمیافغانستان کو داعش کا گڑھ بنانا پاکستان کیخلاف امریکی سازش کا حصہ ہے، جنرل(ر) اسلم بیگکرم ایجنسی، سکیورٹی فورسز کی گاڑی پر یکے بعد دیگرے 2 بم دھماکے، 4 اہلکار زخمیشہید مدافع حرم محسن حججی کی تہران میں با شکوہ تشیع جنازہ / تفصیلی خبر جلد ہی اسلام ٹائمز پر
 
 
 

امام زین العابدین کی حیات طیبہ کا اجمالی تذکرہ

امام صادق (ع) کا مقام امام ابو حنیفہ کی زبانی

استقبال ماہ رمضان المبارک

کن فیکن

حکومت، اسکے تقاضے اور موجودہ حکمران

زیارات معصومینؑ کی مخالفت، ذہنی فتور ہے

دینی مدارس، غلط فہمیاں اور منفی پروپیگنڈہ

شناخت مجهولات کا منطقی راستہ

انسان کی شخصیت میں دوست کا کردار

اقبال اور تصورِ امامت (1)

روزے کا فلسفہ، چند معروضات

قیام امام حسینؑ کی اہمیت غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

امام حسین (ع) کے بارے میں آئمہ معصومین علیہم السلام کے ارشادات

تاریخ بشریت کا چمکتا ستارہ

فضیلت حضرت علیؑ غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

علی کی شیر دل بیٹی

حضرت فاطمۃالزہرا (س) بحیثیت آئیڈیل شخصیت

حضرت علی المرتضٰی۔ؑ ۔۔۔ شمعِ رسالت کا بےمثل پروانہ

زہراء (س) کیا کرے!

عظمت حضرت زہرا (س) غیر مسلم دانشوروں کی نظر میں

وہ جو اصلِ لفظ بہار ہے

انقلاب حسين بزبان حضرت امام حسين (ع)

محبت اہل بیت (ع)

مشہدالمقدس، مسافر خانہ حسینیہ شہید عارف الحسینی میں میرا قیام (آخری حصہ)

مکتب تشیع کے ترجمان؟

اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد

الشام۔۔الشام۔۔الشام

معجزہ گر سپہ سالار

شہادتِ امام حسین (ع) کے مقاصد اور انکا حصول

 
نیوز لیٹر کیلئے اپنا ای میل ایڈریس لکھیں.
 
 
Wednesday 11 January 2017 - 19:08
Share/Save/Bookmark
قومی احتساب بیورو کرپٹ عناصر کے لیے پناہ بن کر رہ گیا ہے، بہادر خان جکھڑ
قومی احتساب بیورو کرپٹ عناصر کے لیے پناہ بن کر رہ گیا ہے، بہادر خان جکھڑ
 
 
جھنگ میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے جماعت اسلامی کے رہنما کا کہنا تھا کہ تمام اداروں کو اپنی حدود میں رہتے ہوئے کام کرنا چاہئے، سیاسی عدم استحکام جمہوریت، ملکی سلامتی اور بقا کے لیے سنگین خطرہ ہے، ملک میں لاقانونیت کی انتہاء ہوچکی ہے، یہ کیسا نظام رائج ہے کہ جس میں غریب افراد کو رشوت دینے پر مجبور ہے، سرمایہ دار، جاگیردار قرضے ہڑپ کر جائیں تو کوئی پوچھنے والا نہیں۔
 
اسلام ٹائمز۔ جماعت اسلامی جھنگ کے امیر بہادر خان جکھڑ نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ قومی احتساب بیورو کرپٹ عناصر کے لیے پناہ گاہ بن کر رہ گیا ہے، جس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔ جھنگ میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 45 سال کے دوران 280 ارب کے قرضے معاف کرائے گئے اور کرپشن کی بڑی بڑی داستانیں منظر عام پر آئیں، اب وقت آ گیا ہے کہ ملک میں بلاتفریق احتساب کا عمل شروع کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ایک ہفتے کے دوران چار سوشل میڈیا ماہرین کا اغواء انتہائی قابلِ مذمت ہے، حکومت اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی کارکردگی پر بڑا سوالیہ نشان ہے، ماورائے آئین و قانون اقدامات سے پوری قوم میں عدمِ تحفظ کا احساس بڑھ رہا ہے، چاروں لاپتہ ہونے والے افراد کو جلد از جلد بازیاب کروانے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر کام شروع کیا جائے، یوں محسوس ہوتاہے کہ حکمران عوام کے جان و مال کی حفاظت کرنے میں بری طرح ناکام ہوچکے ہیں۔ انکا کہنا تھا کہ تمام اداروں کو اپنی حدود میں رہتے ہوئے کام کرنا چاہئے، سیاسی عدم استحکام جمہوریت، ملکی سلامتی اور بقا کے لیے سنگین خطرہ ہے، ملک میں لاقانونیت کی انتہاء ہوچکی ہے، یہ کیسا نظام رائج ہے کہ جس میں غریب افراد کو رشوت دینے پر مجبور ہے، سرمایہ دار، جاگیردار قرضے ہڑپ کر جائیں تو کوئی پوچھنے والا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے تمام مسائل کا حل اسلامی شرعی نظام میں پنہاں ہے، وقت کا تقاضا ہے کہ فرسودہ نظام سے چھٹکارہ حاصل کیا جائے۔
 
خبر کا کوڈ: 599013